ٹیکسیشنفنانس
تازہ ترین

برطانیہ میں اثاثے چھپانے والوں کے خلاف 15 اکتوبر کے بعد بھرپور کاروائی ہوگی، ذرائع ایف بی آر

اسسمنٹ آرڈر کے اجراء کے سات دن بعد 80 سے زائد افراد کیخلاف قانون نافذ کرنے والے اداروں سے مدد طلب کئے جانے کا امکان

کراچی: فیڈرل بورڈ آف ریوینیو نے برطانیہ میں اثاثوں کی تفصیلات اور مضبوط شواہد پر کراچی سے تعلق رکھنے والے 80 سے زائد افراد کو حتمی نوٹس جاری کردیئے ہیں۔ برطانیہ میں اثاثوں اور غیر منقولہ جائیداد کی تفصیلات ظاہر نہ کرنے پر ان 80 سے زائد شخصیات کے خلاف 15 اکتوبر کو اسسمنٹ آرڈر جاری کئے جائیں گے جن کی مدت سات دن ہوگی ان سات دنوں میں مزکورہ افراد کی جانب سے اثاثوں اور غیر منقولہ جائیدادوں کی تفصیلات پیش نہ کئےجانے کی صورت میں عملی اقدامات کئے جائیں گے جن میں قانون نافذ کرنے والے اداروں سے بھی مدد طلب کی جاسکتی ہے۔

ایف بی آر کے معتبر ذرائع نے اطلاع دی ہے کہ ماضی میں ملک کا پیسہ باہر لے جانے والے 400 سے زائد افراد میں 80 فیصد افراد نے ایمنسٹی اسکیم اور دیگر طریقہ کار کے ذریعے بیرون ممالک اپنے اثاثے اور غیر منقولہ جائیدادوں کو ظاہر کیا جس کے نتیجے میں یہ افراد ٹیکس نیٹ کا حصہ بن چکے ہیں لیکن حکومت اور خصوصا” ایف بی آر کی جانب سے متعدد بار اطلاع مشتہر کئے جانے کے باوجود 80 سے زائد افراد نے برطانیہ میں اپنے اثاثے اور غیر منقولہ جائیدادوں کو ظاہر نہیں کیا۔

ماضی میں سیاسی مصلحتوں کا شکار ہونے والے ادارے کو نئی حکومت کی جانب سے واضع احکامات ملنے کے بعد حکام نے ایمنسٹی اسکیم کی حتمی تاریخ سے قبل ہی مبینہ ٹیکس چوروں کے خلاف مضبوط شواہد اکھٹے کرلئےہیں ۔

ایمنسٹی اسکیم کی حمتی تاریخ گزرنے کے بعد فیڈرل بورڈ آف ریوینیو نے نوٹسسز جاری کردیئے ہیں۔ معتبر ذرائع کا کہنا ہے کہ 80 سے زائد افراد میں بڑے ٹیکسٹائل ایکسپورٹرز کے نام شامل ہیں لیکن کاروائی میں خلل کے خدشے کے سبب ان افراد کے نام ظاہر نہیں کئے جارہے۔

واضع رہے کہ ماضی کی طرح اثاثے چھپانے والے ان افراد کی حمایت میں گزشتہ دنوں چند تاجر تنظیموں کی جانب سے نوٹسسز کے اجراء کے خلاف حکومت پر دباؤ ڈالنے کے لئے بیانات بھی جاری کئے گئے جس کے بارے میں ذرائع کا کہنا ہے کہ نئی حکومت پہلے ہی فنانشل ٹاسک فورس کی سخت ترین سفارشات، ملکی قرضوں کے بوجھ اور مہنگائی کی شرح میں اضافے سے نبرد آزماء ہے لہزا حکومت وقت کی جانب سے ایف بی آر کوحقیقی ٹیکس دہندگان کو سہولت دیتے ہوئے مبینہ ٹیکس چوروں کے گرد مظبوط حصار قائم کرنے کا گرین سگنل دے دیا گیا ہے۔

ایف بی آر ذرائع کا مزید کہنا ہے کہ اندرون ملک اور بیرون ممالک خفیہ دولت کو بے نقاب کرنے کے لئے کوئی دقیقہ فروگزاشت نہیں کیا جائے گا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ حکومت کی جانب سے ٹیکس ریکوری کے ذریعے خسارے کے بوجھ کو حتی الاامکان کم کیا جاسکے۔

کہا جارہا ہے کہ اندرون ملک بڑے حجم کے صنعتی اور تجارتی اداروں کو بھی مانیٹر کیا جارہا ہے اس حوالے سے اسٹیٹ بینک کے ذریعے تمام نجی مالیاتی اداروں سے کھاتیداروں کی تفصیلات حاصل کرنے کی ابتدائی تیاری مکمل ہوچکی ہے۔

ذرائع کہتے ہیں کہ اسٹیٹ بینک کے فنانشل مانیٹرنگ یونٹ (ایف ایم یو) کے ذریعے ماضی میں سیاسی مصلحتوں کے تحت نظر انداز کئے جانے والے سینکٹروں مشکوک اکاونٹس پر از سر نو کاروائی کا فیصلہ بھی کیا گیا ہے

ٹیگس

Zubair Yaqoob

The author has diversified experience in business reporting. He is senior editor at www.pkrevenue.com. He can be reached at [email protected]

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

error: Alert: Content is protected !!
Close