ٹیکسیشنسیکٹورل

ایف بی آر نے 1 ارب 40 کروڑ روپے کی نادہندہ شاہین ایئر کے مرکزی دفتر کو تالے لگادیئے

مسافروں سےپیشگی ایکسائز ڈیوٹی لینے کے باوجود شاہین ایئر نے رقوم ملکی خزانے میں جع نہیں کرائی، ایف بی آر کا الزام

کراچی: متعدد وارننگز کے باوجود شاہین ایئر نے اپنا قبلہ درست نہ کیا۔ 1 ارب 40 کروڑ روپے کی نادہندگی کے نتیجے میں فیڈرل بورڈآف ریوینیو نے شاہین ایئر کے مرکزی دفتر کو تالے لگا دیئے۔ واضع رہے کہ سول ایوی ایشن اتھارٹی کی جانب سے بھی ایک ارب روپے کی نادہندگی پر شاہین ایئر  کی بین القوامی اور ملکی پروازوں پر پابندی لگادی ہے لیکن حجاج کرام کی سہولت کے لئے شاہین ایئر کو حج پروازوں کی اجازت دی گئی ہے۔

 

جمعہ کی سہہ پہر ایف بی آر کی فیلڈ فورس نے تین ماہ سے فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی کی مد میں 1 ارب 40 کروڑ روپے ملکی خزانے میں جمع نہ کرانے پر شاہین ایئر کے مرکزی دفتر کو سربمہر کردیا۔ اس سے قبل ایف بی آر نے پی آئی اے کو بھی ایف ای ڈی کی مد میں رقوم سرکاری خزانے میں جمع نہ کرانے پر تنبیہ کی تھی ج کے بعد وفاقی محولات کے ادارے نے پی آئی اے کے اکاونٹس تک براہ راست رسائی کے ذریعے جمع شدہ رقوم سے ٹیکس کٹوتی کی تھی۔

 

ملکی تاریخ میں پہلی مرتبہ بڑے حجم کے کارپوریٹ ادارے کے دفتر کو فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی کی کئی بار تنبیہ کے بعد دوسری بار سربمہر کیا گیا ہے۔

ایف بی آر ذرائع کا کہنا ہے کہ حج آپریشنز کے بعد شاہین ایئر کے مستقبل کا فیصلہ ہوگا۔ ذرائع نے واضع کیا ہے کہ ٹیکس چوروں کے خلاف قانونی کاروائیوں میں مزید تیزی لائی جارہی ہے۔ ادھر ماہرین کا کہنا ہے کہ بڑے مگر مچھوں کے خلاف وفاقی ادارے کی بلا امتیاز کاروائیوں سے عوام اور ٹیکس دہندگاں کے اعتماد میں اضافہ ہوگا۔

ٹیگس

Zubair Yaqoob

The author has diversified experience in business reporting. He is senior editor at www.pkrevenue.com. He can be reached at [email protected]

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

error: Alert: Content is protected !!
Close