ٹریڈ اینڈ انڈسٹریسیکٹورل
تازہ ترین

سی این جی اسٹیشن مالکان نے از خود فی کلو گیس 12 روپے مہنگی کردی

اکتوبر میں مزید دس روپے اضافے سے 105 روپے فی کلو فروخت ہوگی، سی این جی اور پیٹرول کے درمیان قیمت اور بچت کا فرق ختم

کراچی: گیس ٹیرف میں اضافے کو جواز بناکر سی این جی اسٹیشن مالکان نے گیس کی فی کلو قیمت میں 12 روپے کا اضافہ کردیا۔ اب سی این جی اور پیٹرول کے درمیان قیمت کا فرق یا بچت کا عنصر ختم ہوگیا۔ واضع رہے کہ حکومت کی جانب سے سی این جی سیکٹر پر قیمتوں کا اطلاق نہیں ہوا۔

کراچی سمیت سندھ کے مختلف شہروں میں سی این جی کی فی کلو قیمت 12روپے کے اضافے سے 94 روپے ہوگئی ہے۔ دوسری جانب سوئی سدرن گیس کی تین روزہ بندش سے ٹرانسپورٹ مافیا اور اسکول وین مالکان نے بھی کرائے بڑھانے کے لئے کمر کس لی ہے۔

شہریوں کا کہنا ہے کہ سی این جی اسٹیشن مالکان اپنا نفع کا فرق صارفین پر منتقل کررہے ہیں۔ شہریوں کا کہنا ہے کہ پی ٹی آئی حکومت نے اپنے منشور کے دعوں کے برخلاف مہنگائی کا بوجھ براہ راست عام آدمی پر منتقل کردیا ہے۔

سی این جی اسٹیشن ملکان کا کہنا ہے کہ وہ اپنے منافع کا نقصان برداشت نہیں کرسکتے، مجبورا” قیمتوں میں اضافہ ناگزیر تھا۔
سی این جی ایسوسی ایشن کے مرکزی صدرکا کہنا ہے کہ اگلے ماہ مزید 10 روپے کا اضافہ ہوسکتا ہے جس کے نتیجے میں عام صارف کو فی کلو سی این جی 104 روپے میں دستیاب ہوگی۔

سی این جی صارفین کہتے ہیں کہ حکومت نے عام آدمی کی مشکلات میں اضافہ کردیا ہے۔ شہری تزبزب کے شکار ہیں کہ سی این جی کا مصرف کیا ہوگا۔

اطلاعات کے مطابق اب تک نوٹی فیکیشن جاری نہیں کیا گیا۔ اچانک اضافے سے سی این جی اسٹیشن مالکان کو یومیہ لاکھوں کا منافع شروع ہوگیا۔

ٹیگس

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

error: Alert: Content is protected !!
Close