ٹریڈ اینڈ انڈسٹریسیکٹورل
تازہ ترین

حکومت ممباسا پورٹ پر پھنسے چاول کے 600 کنٹینرز کی بحالی کے فوری اقدامات کرے، زاہد حسین

چاول ملکی برآمدات کا بڑا حصہ دے رہا ہے، توجہ نہ دی گئی تو معیشت کو بھاری نقصان پہنچے گا، صدر پی بی آئی ایف

کراچی: ممباسا پورٹ پر چاول کے 600 کنٹینرز کی بحالی تاحال ممکن نہ ہوسکی۔ کینیا کے حکام نے پاکستانی چاول کے سیمپلز کی ٹیسٹنگ پر بضد ہیں۔ رائس ایکسپورٹرز ایسوسی ایشن آف پاکستان کا اعلٰی سطحی وفد بھی مسئلے کے حل کیلئے کینیا پہنچ چکا ہے۔ وفد کے اراکین جن میں رائس ایکسپورٹرز ایسوسی ایشن کے سینئر نائب چیرمین رفیق سلیمان بھی شامل ہیں، پاکستانی قونصل خانے کے افسران کے ساتھ کینیا کے حکام سے مزاکرات کررہے ہیں۔

ممباسا پورٹ پر23 ہزار میٹرک ٹن پر مشتمل 600 کنٹینرز کی بحالی کے لئے پاکستان بزنس مین اینڈ اینٹےلیکچوئل فورم اور آل کراچی انڈسٹرئل الائنس کے صدر میاں زاہد حسین نے حکومت سے اس مسئلے کو فوری حل کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ ماضی میں برآمدات میں اضافے کے لئے موثر اقدامات نہیں کئے گئے جس کے نتیجے میں تجارتی خسارہ بے لگام ہوچکا ہے۔

پاکستان بزنس مین اینڈ اینٹےلیکچوئل فورم کے صدر میاں زاہد حسین نے وزیر اعظم عمران خان، وفاقی وزیر خزانہ اور وفاقی وزیر تجارت سے مطالبہ کیا ہے کہ رائس ایکسپورٹرز جہوں نے ملکی برآمدات اور نئی منڈیوں کی تلاش میں اہم کردار ادا کیا ان کی کینیا کی حکومت سے مسئلے کے دیرپا حل میں بھرپور معاونت کی جائے۔ میاں زاہد حسین نے حکومت پر زور دیا ہے کہ برآمدی عمل کو متحرک کرنے کے لئے ویلیو ایڈیشن، ریسرچ اینڈ ڈیویلپمنٹ اسٹیک ہولڈرز کی معاونت کی جائے۔

ٹیگس

Zubair Yaqoob

The author has diversified experience in business reporting. He is senior editor at www.pkrevenue.com. He can be reached at [email protected]

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

error: Alert: Content is protected !!
Close