ٹریڈ اینڈ انڈسٹریسیکٹورل
تازہ ترین

حکومت برآمدات میں اضافے کے لئے ایکسپورٹ پراسسنگ زونز کو ہنگامی بنیادوں پر مکمل کرے، زاہد حسین

افرادی قوت کے تربیتی ادارے قائم کئے جائیں،دنیا سی پیک منصوبوں میں دلچسپی لے رہی ہے

کراچی: پاکستان بزنس مین اینڈ انٹلیکچولز فور م وآل کراچی انڈسٹریل الائنس کے صدر ،بزنس مین پینل کے سینئر وائس چیرمین اور سابق صوبائی وزیر میاں زاہد حسین نے کہا ہے کہ بزنس کمیونٹی نے ہمیشہ پاکستان کے بیرونی دنیا کے ساتھ بہتر تعلقات کی افادیت کو اجاگر کرنے کی کوشش کی ہے۔ نئی حکومت بننے کے بعد مختلف ممالک بشمول سعودی عرب، چین، امریکا اور ایران کے وفود کا پاکستان آنا ، وزیر اعظم عمران خان، آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ ، وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی اور دیگر اعلی حکومتی حلقوں سے ملاقاتیں پاکستان کی بین الاقوامی امیج بلڈنگ میں معاون ہونے کے ساتھ ساتھ پاکستان کی معاشی اور سماجی ترقی میں مثبت کردار ادا کرینگی اور تمام ممالک کے ساتھ دو طرفہ تجارتی اور معاشی تعاون پاکستان کے موجودہ معاشی مسائل کے حل میں اہم کردار اداکرے گی۔

میاں زاہد حسین نے بزنس کمیونٹی سے گفتگو میں کہا کہ موجودہ حکومت کی طرف سے سی پیک میں سوشل سیکٹر کی ترقیاتی اسکیمز بشمول صاف پانی، صحت، تعلیم اور ٹیکنیکل ٹریننگ پاکستان میں معیار زندگی کو بلند کرنے میں اہم کردار ادا کرے گا۔ وسط ایشیا، یورپ، روس، ترکی اور سعودی عرب سمیت دیگر ممالک کی سی پیک میں شمولیت سے نہ صرف ملٹی بلین پراجیکٹ کی افادیت میں اضافہ ہوگا بلکہ خطہ کے تمام ممالک ترقی کرینگے ۔دوسرے ممالک کا سی پیک میں اشتراک پاکستان میں بیرونی سرمایہ کاری کے لئے ایک اہم سنگ میل ثابت ہوگا، دوطرفہ تجارت ترقی کرے گی، نئی بین الاقوامی منڈیوں میں پاکستان کی رسائی ہوگی، برآمدات میں ازحد اضافہ ہوگا اور پاکستان کے ویلیو ایڈیشن سیکٹر میں ترقی سے برآمدات کی بہتر قیمتیں حاصل ہونگی۔

میاں زاہد حسین نے کہا کہ ایکسپورٹ پروموشن زونز کو ہنگامی بنیادوں پر تکمیل تک پہنچایا جائے اور اس میں پاکستانی سرمایہ کاروں کو مساوی مواقع فراہم کئے جائیں، تاکہ بیرونی سرمایہ کاری اورخطے کے دیگر ممالک کا سی پیک میں اشتراک کی راہ ہموار ہوسکے۔ سی پیک کے 22پراجیکٹس میں سے 13زیر تکمیل ہیں جس سے پاکستان کی معیشت میں سالانہ 1سے 2فیصد اضافہ ہونے کے ساتھ ساتھ 70ہزار ملازمتیں پیدا ہوئیں ہیں۔رشکئی اور ہتار اسپیشل اکنامک زونز جس کی پہلے فیز میں تکمیل کی توقع تھی، تاحال شروع نہیں ہوسکے،دونوں زونز کی رواں سال میں تعمیراتی کام کا آغاز ممکن بنایا جائے۔ سی پیک کے تحت ملک بھرمیں ٹیکنیکل ٹریننگ کے اداروں کا جال بچھایا جائے تاکہ پاکستانی افرادی قوت کو بہتر مراعات کے ساتھ سی پیک پراجیکٹس میں ملازمت کے مواقع مل سکیں۔نیشنل یونیورسٹی آف سائینس اینڈ ٹیکنالوجی اور بحریہ یونیورسٹی کی جانب سے سی پیک کے پیش نظر اہم سیمینارز اور کانفرنسز منعقد کئے جارہے ہیں تاکہ سی پیک سی پاکستانی قوم کو خاطر خواہ فائدہ ہوسکے، اس کے ساتھ ساتھ نیشنل ووکیشنل ٹریننگ اینڈ ٹیکنیکل انسٹیٹیوشن اور اسکل ڈولپمنٹ کونسل سمیت کئی ادارے اس مقصد کے حصول کے لئے کوشاں ہیں، ان اداروں کو وسعت دینے کے ساتھ ساتھ مستقبل سے ہم آہنگ نئے جدید کورسز اور ٹریننگ پروگرامز کا اجراء کیا جائے تاکہ جدید تقاضوں کے مطابق ہنرمند افرادکی تیاری میں مدد مل سکے۔

میاں زاہد حسین نے کہا کہ سی پیک کے تحت گوادرمیں اب تک12طے شدہ منصوبے ہیں جن میں سے صرف ایک یعنی پورٹ سٹی ماسٹر پلان رواں سال میں مکمل ہوا، 3منصوبہ زیر تکمیل ہیں جبکہ 8منصوبوں پر ابھی تعمیراتی کام شروع نہیں ہوا۔ گوادر ائیرپورٹ، ٹیکنیکل سینٹر اور ہسپتال کے منصوبوں کے ساتھ ساتھ صاف پانی کی فراہمی کے منصوبوں کو جلد از جلد مکمل کیا جائے تاکہ مقامی آبادی سی پیک کے ثمرات سے فائدہ اٹھاسکے

ٹیگس

Zubair Yaqoob

The author has diversified experience in business reporting. He is senior editor at www.pkrevenue.com. He can be reached at [email protected]

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

error: Alert: Content is protected !!
Close