منی اینڈ بینکنگ
تازہ ترین

نیشنل بینک کے صدرکی تقرری کا معاملہ، عدالت نے دلائل سننے کے بعد اٹارنی جنرل کو نوٹس جاری کردیا

سابق صدر نیشنل بینک سعید احمد اپنے وکیل کے ساتھ پیش ہوئے، سماعت 10 ستمبر تک ملتوی

اسلام آباد: سابق صدر نیشنل بینک سعید احمد کی جانب سے دائرکی گئی درخواست پر اسلام آباد ہائی کورٹ کے سنگل رکنی بینچ جسٹس اطہر من اللہ نے کی۔ سابق صدر نیشنل بینک سعید احمد اپنے وکیل کے ساتھ عدالت میں پیش ہوئے۔

وکیل نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ درخواست گزار کنٹریکٹ ملازم ہے دوران ملازمت قانون و ضوابط کی کبھی خلاف ورزی نہیں کی، کوئی ڈیپارٹمنٹل انکوائری بھی سعید احمد کے خلاف زیر التوا نہیں ہے۔

سابق صدر نیشنل بینک کے وکیل نے دلائل دیتے ہوئے مزید کہا کہ نہ کوئی چارج فریم ہوا نہ شوکاز کیا گیا بغیر سنے معطلی غیر قانونی ہے، سعید احمد کی 22 مارچ 2017 سے یکم جنوری 2019 تک مدت ملازمت ہے۔

نیشنل بینک آف پاکستان کے سابق صدر سعید احمد کے وکیل نے عدالت سے استدعا کی کہ اٹھائیس اکست کے سیکرٹری خزانہ کے نوٹیفیکیشن کو غیر قانونی قرار دے کر کلعدم قرار دیا جائے اور سعید احمد کو یکم جنوری 2019 تک بطور نیشنل بنک کے صدر کام کرنے کی اجازت دی جائے۔

عدالت نے اٹارنی جنرل کو نوٹس جاری کرتے ہوئے کیس کی سماعت 10 ستمبر تک ملتوی کردی۔

ٹیگس

Zubair Yaqoob

The author has diversified experience in business reporting. He is senior editor at www.pkrevenue.com. He can be reached at [email protected]

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

error: Alert: Content is protected !!
Close