ٹیکسیشنفنانس
تازہ ترین

قومی اسمبلی میں فنانس ایکٹ میں ترامیم کا بل وزیر اعظم کی سعودی عرب سے واپسی تک موخر کئے جانے کا امکان

وزیر اعظم سعودی حکومت سے آئی ڈی بی کے ذریعے نرم شرائط پر قرض کیلئے مزاکرات کرینگے، عمران خان کا پہلا اور اہم ترین دورہ ہوگا

کراچی: وفاقی حکومت کی جانب سے رواں ہفتے قومی اسمبلی میں فنانس ایکٹ 2018 ترمیمی بل پیش کئے جانے کے امکانات معدوم ہوگئے۔ معتبر ذرائع کے مطابق وزیر اعظم کے دورہ سعودی عرب اور ضمنی انتخابات کے بعد بجٹ ترامیم سے متعلق تجاویز پیش کی جائیں گی اور ان ترامیم کا انحصارسعودی عرب کے دورے میں وزیر اعظم عمران خان کے سعودی حکمرانوں سے مزاکرات پر بتایا جارہا ہے۔

واضع رہے کہ قومی اسملبی کا اجلاس (کل) منگل 18 ستمبر کو طلب کیا گیا ہے جبکہ اسی روز وزیر اعظم سعودی عرب کے دورے پر روانہ ہونگے۔ قومی اسمبلی میں وفاق کی جانب سے آئیندہ 9 ماہ کیلئے موجودہ میں فنانس ایکٹ ترامیم پیش کی جانی تھی۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ سعودی عرب کے دورے کے موقع پر وزیر اعظم عمران خان اسلامی ترقیاتی بینک ( آئی ڈی بی) کے ذریعے سعودی عرب سےنرم شرائط 8 ارب ڈالر قرض کے لئے مزاکرات کریں گے۔ ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ سعودی عرب سے 4 سے 5 ارب ڈالر کی امداد کے لئے رضا مندی ظاہر کرچکا ہے۔ دوسری جانب آج ہونے والے اقتصادی رابطہ کمیٹی کےاجلاس میں بھی فنانس ایکٹ 2018 میں ترامیم کے حوالے سے کوئی ایجنڈا شامل نہیں کیا گیا ہے۔

آج اقتصادی رابطہ کمیٹی کے اجلاس میں گردشی قرضوں، گیس نرخوں اور ملک بھر میں ایل پی جی کی اضافی قیمتوں پر غور اور فیصلے کئے جایئں گے۔

وزیر اعظم کے دورہ سعودی عرب اور ضمنی انتخابات کے باعث مالیاتی ایکٹ میں ترامیم کا مسودہ 14 ستمبر کے قومی اسمبلی اجلاس میں بھی پیش نہیں کیا جاسکا۔

ٹیگس

Zubair Yaqoob

The author has diversified experience in business reporting. He is senior editor at www.pkrevenue.com. He can be reached at [email protected]

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

error: Alert: Content is protected !!
Close