فنانسمنی اینڈ بینکنگ
تازہ ترین

سیعد احمد برطرف، طارق جمالی نیشنل بینک کے قائم مقام صدر ہونگے

طارق جمالی نے سابق صدر سید علی رضا سے ایک کروڑ مالیت کا کیش ایوارڈ لینے سے انکار کردیا تھا۔

کراچی: وزیرِ اعظم عمران خان کی زیرِ صدارت وفاقی کابینہ کے اجلاس میں صدر نیشنل بینک کو ہٹانے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ سعید احمد کی برطرفی کے بعد نیشنل بینک کے سینئر افسر طارق جمالی کو قومی بینک کے قائم مقام صدر کی ذمہ داری سونپی جارہی ہے۔

اسلام آباد میں منعقد ہونے والے وفاقی کابینہ کے اہم اجلاس میں نیشنل بینک کے صدر سعید احمد خان کو عہدے سے ہٹانے کا فیصلہ کیا گیا جب کہ طارق جمالی کو قومی بینک کا قائم مقام صدر مقرر کیا گیا۔

وفاقی وزیرِ اطلاعات فواد چوہدری نے اجلاس کے بعد نیوز کانفرنس میں تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ سعید احمد اشتہاری اسحاق ڈار کے ساتھ منی لانڈرنگ میں ملوث تھے۔

جے آئی ٹی اور نیب کی انکوائریوں میں مبینہ طور پر ملوث نیشنل بینک آف پاکستان کے صدر سعید احمد خان کو عہدے سے ہٹانے کا فیصلہ کرلیا گیا ہے۔ اب ان کی جگہ نئے صدر کی ذمہ داریاں سونپنے کےلیےبینک کے سینئر ترین ایگزیکٹو طارق جمالی کو وزارت خزانہ نے اسلام آباد طلب کرلیا ہے۔

وزارت خزانہ کے ذرائع کا کہنا ہے کہ طارق جمالی نیشنل بینک کے سینئر ترین افسران میں شمار کئے جاتے ہیں ہیں طارق جمالی کو بینک کے سابق صدر علی رضا نے 1992 میں بینک کے درجنوں ایگزیکٹوز کو غیر ضروری طور پر ایک کروڑ تک مالیت کے کارکردگی ایوارڈ جاری کیے تھے لیکن طارق جمالی واحد ایگزیکٹو تھے جنہوں نے کیش ایوارڈ لینے سے انکار کردیا تھا۔

بعدازاں طارق جمالی کو غیر اہم عہدوں پر تعینات کیا گیا ۔ان کی مدت ملازمت کے طویل دورانیے میں اکثر انہیں اہم ذمہ داریوں سے دور رکھا گیا۔واضح رہے کہ طارق جمالی اس وقت نیشنل بینک میں زرعی ایگزیکٹو ڈپارٹمنٹ کے سربراہ کی حیثیت سے کام کررہے ہیں۔

طارق جمالی 1987 سے نیشنل بینک کے ساتھ وابستہ ہیں اپنی 26 سالہ بینکاری خدمات کے دوران قومی بینک کے متعدد شعبوں میں فرائض انجام دیئے انہوں نے ڈیلاس (امریکہ) سے ماسٹر آف بزنس ایڈمنسٹریشن کی ڈگری حاصل کی ہے

ٹیگس

Zubair Yaqoob

The author has diversified experience in business reporting. He is senior editor at www.pkrevenue.com. He can be reached at [email protected]

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

error: Alert: Content is protected !!
Close