فنانس
تازہ ترین

ایف بی آر کے اعلٰی ترین عہدوں پر فائز 20 سے زائد افسران کے تبادلوں کا امکان

ایف اے ٹی ایف سفارشات، پاکستانیوں کی غیرملکی جائیداد، اثاثوں کی چھان بین میں حائل رکاوٹوں کو دور کرنے کیلئےسخت اقدامات کریگی، ذرائع

اسلام آباد: حکومت نے فیڈرل بورڈ آف ریوینیو ( ایف بی آر) کے اعلٰی ترین افسران کو تبدیل کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔ تبادلوں کی فہرست ترمیم شدہ فنانس بل کی تیاری سے قبل ترتیب دی گئی تھی لیکن وزیر اعظم کے دورہ سعودی عرب اور قومی اسمبلی میں ترمیمی بل پیش کئے جانے کے سبب اس اقدام کو موخر کردیا گیا تھا۔

معتبر ذرائع کا کہنا ہے کہ فنانشل ٹاسک فورس کی سفارشات، بیرون ممالک پاکستانیوں کی غیر منقولہ جائیدادوں اور اثاثوں کی چھن بین میں حائل رکاوٹوں کو دور کرنے اس معاملات کو تیزی سے پائیہ تکمیل کے لئے حکومت کی جانب سے سخت ترین فیصلے متوقع ہیں۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ سابقہ دور میں سیاسی تعلقات کی بناء پر ایف بی آر کے اعلٰی عہدوں پرفائز افسران کے ریکارڈ بھی مانیٹر کئے گئے ہیں۔

ذرائع کہتے ہیں کہ ماضی کی طرح تبادلے پر کسی افسر کے عدالت سے حکم امتناعی حاصل کرنے کے عمل کو قانون کے مطابق سدباب کرنے پر بھی غورکیا گیا ہے۔ ذرائع نے یہ بھی انکشاف کیا ہے کہ ایف بی آر کے اعلٰی ترین عہدوں پر فائز 20 سے زائد افسران کے بیک وقت یا مرحلہ وار تبادلوں کا امکان ہے۔

ذرائع کا کہنا ہے کے حساس نوعیت کے معاملات پروزیر خزانہ اسد عمر کی جانب سے ڈاکٹر محمد جہانزیب خان کو ہدایات دی جاتی ہیں۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ ایف بی آر کے ڈھانچے کی ازسر نو ترتیب کے بعد (اکراس دی بورڈ) ہر شعبے میں چھان بین کا عمل تیز کیا جائے گا۔

ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ تجارتی بینکوں، اسٹاک بروکرز، درآمدی اور برآمدی عمل کے علاوہ ٹیکس نیٹ میں آنے والے اور اس دائرے سے باہر تمام افراد کے پچھلے دس سالوں کے ریکارڈ کی چھان بین ہوگی۔

ٹیگس

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

error: Alert: Content is protected !!
Close