آئی ٹی اینڈ ٹیلی کامٹریڈ اینڈ انڈسٹری
تازہ ترین

اٹھارہویں تین روزہ بین القوامی نمائش آئی ٹی سی این میں 25 کروڑ ڈالر کے معاہدے ہوئے

مجموعی طور پر 70 ہزار افراد نے شرکت کی، اس سال نمائش میں ہونے والے معاہدوں کے نئے ریکارڈ قائم۔ نئی حکموت سے امیدیں وابستہ ہیں ، چینی وفد

کراچی: اٹھارہویں تین روزہ بین القوامی آئی ٹی سی این ایشیاء اور فائر اینڈسیفٹی ایشیاء نمائش میں 25 کروڑ ڈالر کے باہمی معاہدے ہوئے۔ تین روزہ نمائش میں انفارمیشن ٹیکنالوجی اور فائر اینڈ سیفٹی کے شعبوں سے دلچسپی رکھنے والے 70 ہزار سے افراد نے شرکت کی۔ نمائش کے آخری روزہ کراچی کی 20 سے زائد جامعات اور کالجوں کے طلباء و طالبات نے شرکت کی۔

اٹھارہویں تین روزہ بین القوامی آئی ٹی سی این ایشیا اور فائر اینڈ سیفٹی ایشیاء نمائش میں آئی ٹی سیکیورٹی، سائبر سیفٹی، فائر اینڈ کنٹرول پر 30 سیمینارز اور کانفرنسوں شعبوں کے ماہرین نے پاکستان میں انفارمیشن ٹیکنالوجی کے مستقل پر اپنے تجربات سے آگاہ کیا۔

اے ٹو زی کریئیشن کے حوالے سے آئی ٹی کے ماہر علی عدنان کا کہنا تھا کہ گزشتہ سال کے مقابلے میں اٹھارویں آئی ٹی سی این میں شرکاء کی دلچسپی اور معاہدوں میں اضافہ ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ آئی ٹی سی این اب عالمی سطح پر کسی بھی بڑی نمائش کا مقابلہ کرسکتی ہے۔ علی عدنان کا کہنا تھا کہ موجودہ حکومت سے بڑی توقعات وابستہ ہیں اور دیکھنا یہ ہے کہ جدید آئی ٹی ٹیکنالوجی کے لئے پالیسیاں کس انداز میں ترتیب دی جاتی ہیں۔

چین کی معروف کمپنی ایل ٹیک لی کے وفد کی سربراہ شرلے وو جو گزشتہ 20 سال سے پاکستان کے نجی شعبے کے ساتھ کام کررہی ہیں نے کہا کہ پاکستان کے ساتھ طویل کاروباری شراکت میں کہیں تعطل نہیں آیا۔ انہوں نے کہا کہ ماضی میں پالیسیوں کا تسلسل نہ ہونے سے کئی مسائل پیدا ہوئے لیکن چین پر امید ہے کہ وزیر اعظم عمران خان کی قیادت میں پاکستان ترقی کی نئی رہیں سر کرے گا۔ شرلے وو نے اس تاثر کو غلط قرار دیا کہ چین کی مصنوعات کے معیار میں فرق آیا ہے، انہوں نے کہا کہ آئی ٹی سمیت کئی شعبوں میں چین نے سرعت کے ساتھ جدید ٹیکنالوجی اپنائی ہے۔

نمائش میں شریک تاجر رہنماء سہیل احمد چاندنہ نے کہا کہ آءی ٹی سی این نمائش کے ذریعے مختلف ممالک کے وفود کے ساتھ بی ٹو بی معاہدے ہوئے ہیں جو پاکستانی کمپنیوں کے لئے سود مند ثابت ہونگے۔ اٹھارہویں آئی ٹی سی این اور فائر اینڈ سیفٹی ایشیاء نمائش میں 25 ممالک کی 600 کمپنیوں کے وفود نے شرکت کی۔

نمائش کے دوسرے روز وزیر اعلٰی سندھ کے مشیر اطلاعات بیرسٹر مرتضٰی وھاب اور شہلا رضا نے دورہ کیا۔ بیرسٹر مرتضٰی وھاب کا کہنا تھا کہ سندھ حکومت بین القوامی نمائشوں کے فروغ کے لئے نجی شعبے سے بھرپور تعاون کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ کراچی میں غیر ملکیوں کی آمد سے دنیا بھر میں مثبت تاثر جارہا ہے۔ شہر کے مسائل کے حل کیلئے سندھ حکومت سنجیدہ کوششیں کررہی ہے۔

نمائش کے آخری روز میڈیا سے گفتگو کے دوران ای کامرس گیٹ وے کے نائب صدر عمیر نظام نے کہا کہ ایکسپو سینٹر میں بیک وقت دو نمائشوں کا انعقاد بڑا چیلنج تھا جسے سندھ حکومت، ٹی ڈیپ ، آئی بی اے، پاکستان سیکیورٹی ایجنسیز ایسوسی ایشن اور دیگر اداروں کے تعاون سے احسن انداز میں پایہ تکمیل تک پہنچایا گیا ہے۔

ٹیگس

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

error: Alert: Content is protected !!
Close